گلگت بلتستان میں بنیادی حقوق معطل ہیں اور حکومت کے پاس وقت نہیں، سلمان اکرم راجہ

0
79

آج سپریم کورٹ آف پاکستان میں گلگت بلتسان کی آئینی حقوق سے متعلق گلگت بلتستان بار کونسل کی پیٹیشن نمبر 55/2018 اور دیگر مقدمات کی سپریم کورٹ آف پاکستان کے 7 رکنی لارجر بینچ نے سماعت کی. سماعت کے دوران چیف جسٹس آف پاکستان نے اٹارنی جنرل آف پاکستان جناب انور منصور خان سے سرتاج عزیز کی سفارشات پر وفاق کا جواب طلب کیا تو اٹارنی جنرل آف پاکستان نے کہا کہ وفاقی حکومت نے ابھی تک اس پر باقاعدہ کیبینٹ میٹنگ نہیں کی لہذا اسے مزید وقت دیا جائے. اس پر چیف جسٹس آف پاکستان. نے کہا کہ اس سے زیادہ اہم ایشو اور کیا ہوسکتا حکومت کو پورے دو ہفتے ملے تھے ابھی تک حکومت نے اس پر جواب نہیں دیا. اس پر اٹارنی جنرل آف پاکستان نے کہا کہ حکومت تقریبا سرتاج عزیز کی سفارشات طرز پر ہی کوئی فیصلہ کرنے کا سوچ رہی ہے. البتہ اس ضمن میں کیبینٹ میٹنگ نہیں ہوئی . لہذا حکومت چاہتی ہے کہ اس کو مزید وقت دیا جائے. اس دوران گلگت بلتسان بار کونسل کے وکیل سلمان اکرم راجہ نے کہا کہ گلگت بلتسان کے عوام کے بنیادی انسانی حقوق سلب ہیں اور حکومت کے پاس بنیادی انسانی حقوق کی فراہمی جو حکومت کی اولین ذمہ داری ہے کے لئے حکومت کے پاس وقت نہیں. اس سے زیادہ اہم بات کیا ہوسکتی ہے . اس پر چیف جسٹس آف پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بہتر ہے حکومت خود اس پر فیصلہ کرے نہیں اسکو فیصلے میں کوئی مشکل ہے تو ہم یہاں بیٹھے ہیں مشکل فیصلے کرنے کے لئے. آپ نے دیکھا کہ ہم اس سے بھی زیادہ مشکل فیصلے کرچکے ہیں جس کی تائید جسٹس گلزار احمد نے بھی کی. اس دوران وآئس چئرمین گلگت بلتسان بار کونسل جاوید احمد ایڈووکیٹ نے آگے بڑھ کر گلگت بلتسان اسمبلی کی 29 اکتوبر کو مشترکہ طور پر منظور کی گئی قرارداد جس میں متفقہ طور پر سرتاج عزیز کی سفارشات پر عملدرآمد کرانے کا مطالبہ کیا گیا ہے چیف جسٹس آف پاکستان جناب ثاقب نثار نے کو پیش کی. جس پر چیف جسٹس آف پاکستان نے اس قرارداد کو عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنایا اور وفاق کو ھدا یت دی کہ وہ پندرہ دن کے اندر جواب عدالت میں جمع کرائے اور اگر وفاق سرتاج عزیز کی سفارشات پر عملدرآمد پر آمادہ نہیں تو ہم اس کیس کو 15 نومبر بروز جمعرات سنیں گے اور جمعہ, ہفتہ اور اتوار مسلسل سنیں گے اور اس دوران دیگر تمام کیسز ملتوی ہونگے.سپریم کورٹ کی گلگت بلتسان کے کیسز کی سماعت کے دوران گلگت بلتسان سے.ایڈوکیٹ جنرل محمد اقبال , وآئس چئرمین گلگت بلتسان بار کونسل جاوید احمد ایڈووکیٹ, سنئر ممبر بار کونسل جاوید اقبال, اسلام آباد ہائیکورٹ میں پریکٹس کرنے والے گلگت بلتسان کے وکلا سمیع احمد ایڈووکیٹ اور شریف ایڈووکیٹ اور سماجی کارکن شیر ولی نوملیجو موجود تھے.

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here